.

.

ملازمت کے لئے انٹرویو دینے کے چند مفید مشورے

اس عالم کا ہر انسان کامیابی چاہتا ہے۔ کامیابی کی خواہش ہر فرد میں کسی نہ کسی صورت میں موجود ہوتی ہے۔ کوئی مال و دولت کے حصول کو کامیابی سمجھتا
ہے، کسی کی نظر میں کامیابی انسانی کی عزتِ نفس میں مضمر ہے۔ کوئی حصولِ علم کو کامیابی کا معیار گردانتا ہے۔ کسی نے کامیابی کو رضائے الہیٰ سے منسوب کیا ہے۔۔۔ غرض ہر شخص مختلف طور سے کامیابی کی تعریف کرتا اور اس کے حصول کے لئے جدوجہد کرتا نظرآتا ہے۔میرے نزدیک کامیابی انسان کی منزلِ مقصود تک پہنچنےاور پانے  کا سفر ہے جس کا وہ تعین کر چکا ہوتا ہے۔ 
قارئین! کامیابی کےسفر کو بعض لوگ ملازمت کے حصول سے منضبط کرتے ہیں۔یعنی طرح اچھی ملازمت
کامیابی کا راستہ ہے۔ اچھی ملازمت کا حصول ممکن ہے اگر اسے حصولِ ملازمت کے طریقہ کار سے واقفیت و آگاہی ہو۔ اس مضمون میں میں چند ایسے اصول و قاعدوں کا زیر قلم لاونگا جس پر عمل کر کے آپ اپنے لئے اچھی اور معیاری ملازمت کے دروازے کھول سکتے ہیں۔ ذہن نشین کیجئے کہ اصولوں پر عمل ہی آپ کی کامیابی کا راز ہے۔ جیسے کہ ایک مفکر نے کہا کہ "علم کا نور یہ ہے کہ عمل کے وقت یاد آ جائے" اسی طرح آپ بھی ان اصولوں پر عمل کرے کے اپنی کامیابیوں کے سفر کو یقینی بنائیں۔
دوستوں۔ ملازمت کے سلسلے میں جو بنیادی مرحلہ ہے وہ ہے انٹرویو! یعنی انٹرویو کے عمل سے ہی آپ کسی ملازمت یا کسی ذمہ داری اٹھانے کے لئے اہل و نااہل ہوتے ہیں۔اسی عمل سے آپ کی قابلیت کی جانچ ہوتی ہے۔ انٹرویو سے خوف کھانے کی ضرورت نہیں یہ نہایت آسان مرحلہ ہے، ہاں آپ انٹرویو سے پہلے ضروری ہدایات جو نیچے درج ہیں کو اپنائے اور کامیابی کے یقین کے ساتھ لوٹیے۔


تیاری:
جس ذمہ داری یا پوسٹ کے لئے آپ انٹرویو دے رہے ہیں اس پوسٹ  کے متعلق جانئے اور تحقیق کیجئے۔یعنی اگر آپ اس پوسٹ پر تعینات ہو جائیں تو کونسی کونسی ذمہ داریاں ہیں جو آپ کو نبھانی ہیں۔
  انٹرویو کی تیاری سلسلے میں ایک اہم کام خود کلامی ہے۔ یعنی آپ خود سے مختلف سوالات کیجئے اور اس کے جوابات دینے کی کوشش کیجئے۔ اس عمل سے آپ کے ذہن میں ایک خاکہ تیار ہوگا جو کہ آپ کو انٹرویو دینے میں معاونت فراہم کرےگا۔اس سلسلے میں تحریری طور پر سوالنامہ تیار کیا جاتا سکتا ہے، مثلا کہ "آپ کا تعارف"، "خاندانی پسِ منظر'،"تعلمی کوائف کی تفصیل"،"آپ کے مشاغل و مصروفیات وغیرہ" ۔ اس نوع کے سوالات کےجوابات تحریری یا زبانی طور پر لکھ کر یاد کیے جا سکتے ہیں۔ بہتر ہو کہ دوست سے دیگر ساتھی کی مددسے اس کی مشق کی جائے۔
 انگریزی زبان پر عبور: آپ سب جانتے ہیں کہ انگریزی بین الاقوامی زبان ہونے کے ناطے ملک کے تقریباً ہر سرکاری و نجی ادارے میں رائج ہے، لہذا اس بات کو ملحوظ رکھیں کہ آپ کو پاس انگریزی بول چال کی Skill ہونے چاہیئے۔
تجربہ بہترین استاد ہے۔ انٹرویو کے سلسلے میں ایسے احباب سے ملئے جو اس مرحلے سے گزرے ہوں ان کے انٹریوں کی تفصیل جانئے ان کے تجربہ سے مستفید ہونے کی کوشش کیجئے۔
ایک اہم کام اپنی قابلیتوں کا بار بار معائنہ کریں۔ مطلوبہ ملازمت کے متعلق آگاہی حاصل کریں کہ کون کون سی ایسی قابلیتں ہیں جو اپنے میں اس ذمہ داری کو نبھانے کے لئے موجود ہونی چاہیئے۔
عمومی معلومات جو کہ انٹریوور ہمیشہ پوچھتا ہے کے سلسلے میں نصاب سے ہٹ کر بھی مطالعے کیا کیجئے تاکہ بوقت ضرورت آپ جواب دینے کے قابل ہوں۔
اگر آپ کا پہلی ملازمت کے سلسلے میں انٹرویو دینے جارہے ہیں اس ضمن میں درج بالا نقاط پر غور کریں۔ اسی طرح اگر آپ انٹرویو ماضی میں کئی بار دے چکے ہیں تو ماضی کی غلطیوں اور کوتاہی کو مدنظر رکھ کر دوبارہ کرنے سے پرہیز کریں

چند سوالات جو تیاری کے سلسلے میں آپ خود سے پوچھیں اور ان کا معقول جواب تلاش کرکے اس کی مشق کریں۔
   آپ اپنا تعارف کیسے کروائینگے؟کیا آپ نے مطلوبہ ملازمت کے سلسلے میں کوئی تحقیقی کام(ذمہ داریوں کا احاطہ) کیا ہے؟کیا آپ اپنے آپ کو اس ملازمت کے لئے موزوں تصور کرتے ہیں؟ اس کی وجہ؟اس ملازمت کے معیار پر کیا آپ پورا اترتے ہیں؟آپ کی تعلیمی قابلیت کیا اس ملازمت کے تقاضوں کو پورا کرتی ہیں؟کیا آپ اس ملازمت کی ذمہ داری کے متعلق شعوری طور پر جان چکے ہیں؟
درج بالا سوالات خود کلامی کے مرحلہ میں خود سے کیجئے اور ان کے جوابات تیار کیجئے۔ 
انٹرویو دینے کے لئے حاضری کے تقاضے:
 صاف ستھرا لباس پہن کر جائیں، کوشش کیجئے کہ لباس نیا ہو اگر نیا نہیں تو استری شدہ لباس زیب تن کیجئے۔ کیونکہ لباس آپ کی شخصیت کا عکاس ہوتا ہے۔ فیشن ایبل ڈریس سے اجتناب کیجئے ، سادہ و ستھرا لبا اچھا تاثر پیدا کرتا ہے۔اپنی ظاہری شخصیت کے دیگر پہلووں کا جائزہ لیں۔ جوتوں کو پالش کرنا، بال کو عمدگی سے سنوارنا، ناخن ترشوانا، دانت کی صفائی اور ایک اہم بات کہ اپنے جیب کو ہلکا رکھنا، جیب میں سکے coins یا دیگر کوئی چیزجو کڑکڑاہت یا شور پیدا کرے ساتھ نہ لیجائے۔ اس سے انٹرویو لینے والا مثبت تاثر نہیں لیتا۔انٹرویو کے مقرر وقت سے تقریبا30 منٹ پہلے مقام پر پہنچیں۔
انٹرویوکے دوران انٹرویور اور آپ کے درمیان سوالات و جوابات کا مرحلہ:    
اپنا تعارف کراتے وقت دوستانہ لہجہ اپنائیے۔  انٹرویور کے سوالات میں دلچسپی کا مظاہرہ کیجئے اور غور سے سوال سن کر صحیح جواب دیجئے۔اپنا چہرہ متبسم رکھئے۔ مسکراتا چہرہانٹرویور کو اچھا تاثر دے گا۔  اگر کسی سوال کے جواب دینے میں دقت ہو یا آپ ناکام ہوجائیں تو خوشی سے اپنی ہار تسلیم کرلیں۔انٹرویور کو ہمیشہ اپنے متعلق صحیح معلومات فراہم کریں۔ دروغ گوئی، فراڈ یا کسی بات کو چھپانا آپ کے مستقبل میں نقصان کا باعث بن سکتا ہے۔اس بات کو ہمیشہ ذہن نشین کیجئے کہ آپ مصنوعی پن Over Confident  خود پر سوار نہ کریں۔ ہمیشہ عمومی کیفیت میں رہیے یعنی وہ کیفیت جو آپ کی فطرت کا حصہ ہے۔ 
وہ باتیں جن سے پرہیز کرنا چاہیئے۔ 
دوران انٹرویودائیں بائیں دیکھنا، انگلیوں سے کھیلنا یا ذہنی غیر حاضری کا مظاہرہ کرنا آپ کے لئے نقصان دہ ہے۔۔ محتاط رہیئے، اپنی تمام تر توجہ انٹرویور کے چہرے و سوالات کی جانب مرکوز کیجئے۔  کوشش کیجئے کہ پہلی بار ہی سوال سمجھیں یہ اسی صورت میں ممکن ہوگا کہ آپ حاضر دماغی کا مظاہرہ کریں۔ انٹرویور کو بار بار سوال دھرانے پر مجبور کرنےسے اچھا تاثر قائم نہیں ہو پائے گا۔
اختتامیہ:
 انٹرویو کے اختتام پر انٹرویو کا شکریہ ادا کریں انہوں نے آپ کو مناسب وقت دیا۔ سیٹ سے اٹھتے وقت 'السلام علیکم' کہ کر اٹھیں۔ 
درج بالا نقاط میں کوشش کی گئی ہے کہ عمومی مسائل جو کہ اکثر احباب کو پیش آتے ہیں کا احاطہ کیا جائے۔ پھر بھی اگر کوئی نقطہ جو اہم ہو اور آپ سمجھتے ہوں کہ یہ بھی ایک نفسیاتی یا علمی مسئلہ ہے تبصرے میں بیان کیجئے۔ تاکہ احباب آپ کے تجربے سے بھی مستفید ہو سکیں۔ شکریہ۔ 
گوگل پلس پر شئیر کریں

Syed Asif Jalal

سید آصف جلالؔ بلاگ ہذا کے مصنف ہیں۔ علمی ، ادبی،سیاسی اور معاشی موضوعات پر لکھنے ہیں ۔
    تبصرہ بذریعہ گوگل اکاؤنٹ
    تبصرہ بذریعہ فیس بک

2 تبصروں کی تعداد:

  1. آصف جلال بھائی آپ نے بہت عمدہ لکھا ہے۔۔ حوصلہ افزائی قبول کیجئے

    ReplyDelete
  2. خوب معلوماتی پوسٹ ہے، ایسے موضوعات گو اردو میں موجود ہیں لیکن لوگ اس سے بہت کم مستفید ہوتے ہیں،

    ReplyDelete

بہت شکریہ